Army Chief 148

پاک فوج کو بدنام کرنے کی پروپیگنڈا مہم، عسکری قیادت کا سخت نوٹس

راولپنڈی میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیرصدارت 79ویں فارمیشن کمانڈر کانفرنس ہوئی۔ کانفرنس میں پاک فوج کو بدنام کرنے، ادارے و معاشرے کے درمیان تفریق پیدا کرنے کی پروپیگنڈا مہم کا سختی سے نوٹس لے لیا۔ کانفرنس کے شرکا نے ملک اور قانون کی حکمرانی کیلئے عسکری قیادت کے فیصلوں کی بھرپور حمایت بھی کی۔

پاک فوج کے شعبۂ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف کی زیر صدارت فارمیشن کمانڈر کانفرنس ہوئی۔ کانفرنسمیں کور کمانڈرز، پرنسپل اسٹاف آفیسرز اور پاک فوج کے تمام فارمیشن کمانڈرز نے شرکت کی۔ کانفرنس کے شرکا کو پشہ وارانہ امور، قومی سلامتی کو درپیش چیلنجز اور روایتی و غیر روایتی خطرات سے نمٹنے کیلئے اٹھائے گئے اقدامات پر بریفنگ دی گئی۔ کانفرنس کے شرکا کو پیشہ وارانہ امور اور نیشنل سیکیورٹی چیلنجز سے بھی آگاہ کیا گیا۔
آئی ایس پی آر کے مطابق کانفرنس میں پاک فوج کو بدنام کرنے اور ادارے و معاشرے کے درمیان تفریق پیدا کرنے کی پروپیگنڈہ مہم کا نوٹس لیا گیا۔ کانفرنس میں مہم کی روک تھام پر بھی تبادلۂ خیال کیا گیا۔ فارمیشن کمانڈرز نے واضح طور پرپیغام دیا کہ ہم پروپیگنڈا مہم چلانے والوں تک پہنچ چکے ہیں۔ کچھ بھی ہوجائے فوج قومی سلامتی پر کبھی بھی کمپرومائز نہیں کریگی۔
آئی ایس پی آر کے مطابق کانفرنس میں پاک فوج وطن کی حفاظت کیلئے ہمیشہ ریاستی اداروں کے ساتھ کھڑے رہنے اور آئندہ بھی کھڑے رہنے کے عزم کا ایک بار پھر اعادہ کیا گیا۔
ترجمان پاک فوج کے جاری اعلامیے میں کہا گیا کہ فارمیشن کمانڈرز کانفرنس پوری فوج کی آواز ہے اور پوری فوج آئین اور قانون پر عمل پیرا ہے۔ فارمیشن کمانڈرز کے شرکا نے آئین اور قانون کی حکمرانی کو ہر قیمت پر برقرار رکھنے کے عسکری قیادت کے فیصلے پر بھرپور اعتماد کا اظہار بھی کیا۔
چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کانفرنس کے اختتام پر شرکا سے مختصر گفتگو کی۔ انہوں نے کہا کہ پاک فوج اپنی ذمہ داریوں سے آگاہ ہے۔ پاک فوج ہر قسم کے اندرونی و بیرونی خطرات کیخلاف پاکستان کی علاقائی سالمیت اور خود مختاری کا دفاع جاری رکھے گی۔
آرمی چیف کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کی قومی سلامتی مقدس ہے۔ پاک فوج بغیر کسی سمجھوتے کے پاکستان کی سلامتی کے لیے ہمیشہ ریاستی اداروں کے ساتھ کھڑی رہے گی۔ پاک فوج قانون کی حکمرانی کو ہر صورت برقرار رکھے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں