Imran Khan 155

کپتان کی پشاور میں حکومت کو للکار، امپورٹڈ حکومت نامنظور کا نعرہ، الیکشن ہونے تک سڑکوں پررہنے کا اعلان

سابق وزیراعظم عمران خان نے پشاور میں جلسے سے دبنگ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن ہونے تک ہم سڑکوں پر رہیں گے۔ پوری قوم ہفتے کو امپورٹڈ حکومت کے خلاف ملک گیر احتجاج ریکارڈ کرائے۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ میرے پیارے ججز میں نے عدلیہ کی تحریک میں حصہ لیا۔ عدالتی آزادی کیلئے جیل بھی کاٹی ہے۔ میں نے ہمیشہ قانون پر عمل کیا ہے۔ کوئی بھی مجھ پر کسی قسم کا الزام نہیں لگا سکتا۔ کرکٹ کھیلنے کے دوران بھی کوئی غیرقانونی کام نہیں کیا۔
عمران خان نے عدلیہ سے سوال کرڈالا کہ میں نے ایسا کیا جرم کیا جو رات 12 بجے عدالتیں لگا لی گئیں۔
سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اتور کو ساری قوم نے سڑکوں پر نکل کر بتایا کہ امپورتڈ حکومت نامنظور ہے۔ قوم کو فیصلہ کرنا ہے کہ غلامی چاہتے ہیں یا آزادی؟ ہم امریکہ کے غلاموں کی غلامی کرنے آئے ہیں یا آزادی سے جینے آئے ہیں؟

انہوں نے کہا کہ حکومت میں آئے لوگ سب ضمانت پر ہیں۔ شہباز شریف اور اس کا بیٹا حمزہ شہباز ضمانت پر ہیں۔ نواز شریف اور اس کے بیٹے مفرور ہیں۔ امریکہ نے پاکستانی قوم پر بڑے بڑے ڈاکو مسلط کردیئے ہیں۔ قوم ان ڈاکوؤں کو کبھی بھی قبول نہیں کرے گی۔ شہبازشریف پر 40ارب روپے کی کرپشن کے کیسز ہیں۔

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ سوشل میڈیا کا پاکستان اور باشعور قوم ہے۔ پاکستان میں 6 کروڑ موبائل استعمال ہوتے ہیں۔ کوئی بھی نوجوانوں کا منہ بند نہیں کرسکتا۔ حکومت انتقامی کارروائیوں سے باز رہے۔ قوم کے نوجوانوں کو زبردستی نہیں روک سکتے۔ اگر ہم نے کال دے دی تو حکومت منہ چھپاتی پھرے گی۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے مزید کہا کہ ہمیں امریکیوں کی معافی کی ضرورت نہیں ہے۔ امریکا کون ہوتا ہے جو ہم پاکستانی معافی مانگیں۔ نوازشریف اور زرداری کے دور میں متعدد ڈرون حملے ہوئے اور ان کے منہ سے ایک بھی لفظ نہیں نکلا۔
انہوں نے کہا کہ جب تک حکومت نئے انتخابات کا اعلان نہیں کردیتی ہم مظاہروں کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ اتوار کی طرح تمام پاکستانیوں نے ہفتے کو باہر نکلنا ہے۔ اگر اس سازش کو کامیاب ہونے دیا تو آنے والی نسلیں معاف نہیں کریں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں