Imran Khan Karachi Jalsa 121

سازش کے تحت میرجعفعر کو مسلط کیا گیا، دیوار سے لگایا گیا تو آپ کا نقصان ہوگا، عمران خان

سربراہ پی ٹی آئی عمران خان نے کراچی میں عظیم الشان جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سازش کے تحت میرجعفر کو ہم پر مسلط کردیا گیا ہے۔ 4 ماہ پہلے امریکی سفارتکاروں نے ہمارے لوگوں سے ملاقاتیں شروع کردی تھیں۔ دھمکی دی گئی اگر عدم اعتماد کامیاب نہ ہوئی تو پاکستان کو نقصان ہوگا۔ ہم دوستی چاہتے ہیں، غلامی نہیں کرسکتے۔

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے بڑی تکلیف ہوئی یہ بات ساری زندگی دل میں رہے گی۔ عدلیہ سے پوچھتا ہوں کہ میرا کیا جرم تھا کہ رات 12 بجے عدالتیں کھل گئیں؟ میں نے آزاد عدلیہ کیلئے جیل کاٹی۔ آج تک ملک میں کوئی قانون نہیں توڑا۔ میرا کبھی نام میچ فکسنگ میں نہیں آیا۔ واحد سیاستدان ہوں جسے سپریم کورٹ نے صادق و امین کہا ہے۔ عدم اعتماد کی تحریک سے پہلے میچ فکس ہونے کا پتا چل گیا تھا۔ معزز عدلیہ سے پوچھتا ہوں کہ کیا سپریم کورٹ کو مراسلے کی تحقیق نہیں کرنی چاہیے تھی۔ انہیں پتا تھا کہ عدم اعتماد کی کامیابی کے بعد میر جعفرآئے گا جو اچکن سلوا کر بیٹھا تھا۔

انہوں نے کہا کہ معزز عدلیہ سے پوچھنا چاہتا ہوں کہ جب کھلی منڈی میں سیاست دان بک رہے تھے کیا آپ کو سوموٹو نہیں لینا چاہیے تھا؟ کیا ہمارا آئین منڈی لگانے اور 20 کروڑ میں ضمیر بیچنے کی اجازت دیتا ہے؟

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مجھے کہا گیا کہ میری جان کو خطرہ ہے۔ میری جان سے زیادہ ملک کو آزادی کی ضرورت ہے۔ میں اینٹی امریکا، یورپ یا انڈیا نہیں ہوں بلکہ یہ سازش پاکستان کو غلام رکھنے کیلئے ہوئی تھی۔ دوستی سب سے چاہتا ہوں غلامی نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کل وزیرستان میں ہمارے 8 جوان شہید ہوئے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فوج نے بے شمارقربانیاں دی ہیں۔ مشرف نے کتاب میں لکھا امریکا نے کہا اگرساتھ نہ دیا تو بمباری کریں گے۔ مشرف نے ایک دھمکی پر پاکستان کا اربوں ڈالرز کا نقصان کرادیا۔ پاکستان میں 400 ڈرون حملے ہوئے۔ مجھ سے انٹرویو میں پوچھا گیا کیا آپ امریکا کو ایئربیس دیں گے تو تب میں نے ’ابسولیٹلی ناٹ‘ کہا۔

سابق وزیراعظم کا جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ چیری بلاسم جوتے پالش کرنے کا ایکسپرٹ ہے۔ میر جعفر کو اقتدار سنبھالتے ہی ڈومور کا حکم ملا۔ جب وزیراعظم تھا تو صدر ٹرمپ کو جواب دیا دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کا شکریہ ادا کرنا چاہیے۔ امریکا کے دورے میں جوعزت مجھے ملی شائد ہی کسی کو ملی ہوگی۔ میں امریکی، یورپی یونین کو اچھی طرح جانتا ہوں، جب اپنے ملک کا دفاع کرتے ہیں تو وہ پریشر ضرور ڈالتے ہیں لیکن عزت کرتے ہیں، جب آپ بوٹ پالش کرتے ہیں تو پھرعزت نہیں اور دباتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں


Notice: Undefined index: HTTP_CLIENT_IP in /home/aliucqdo/public_html/wp-content/themes/upaper/functions.php on line 296

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/aliucqdo/public_html/wp-content/themes/upaper/comments.php on line 73

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/aliucqdo/public_html/wp-content/themes/upaper/comments.php on line 79

اپنا تبصرہ بھیجیں