Supreme Court 126

بڑی عدالت نے بڑا فیصلہ سنا دیا، ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ غیر آئینی قرار، قومی اسمبلی بحال

سپریم کورٹ کے لارجر بینچ نے 8 صفحات پر مشتمل مختصر فیصلے میں ڈپٹی اسپیکر کی 3 اپریل کی رولنگ کو کالعدم قراردے دیا۔ سپریم کورٹ نے وزیراعظم کی قومی اسمبلی توڑنے کی سفارش، صدر مملکت کے اسمبلی تحلیل کرنے کے حکم کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے اسے 3 اپریل کی حیثیت سے بحال کردیا ہے۔
عدالت نے قومی اسمبلی کا اجلاس 9 اپریل صبح 10 بجے بلانے کی ہدایت کر دی۔ عدالت نے تحریک عدم اعتماد کی کارروائی کو جاری رکھنے کا حکم بھی دے دیا ہے۔ عدالت نے ہدایت کی کہ اگر عدم اعتماد کامیاب ہوجاتی ہے تو قومی اسمبلی نئے وزیراعظم کا انتخاب کرے۔ تحریک کی ناکامی کی صورت میں عمران خان بطور وزیراعظم اپنا کام جاری رکھیں گے۔ عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ اسپیکر سمیت تمام ارکان فیصلے پر عمل درآمد کے پابند ہیں۔
مختصر فیصلے میں کہا گیا کہ آرٹیکل 63 اے پر عدالتی فیصلے کا کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ حکومت کسی صورت اراکین کو ووٹ ڈالنے سے نہیں روک سکتی۔ سپریم کورٹ کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم اسمبلی تحلیل کرنے کے اہل نہیں تھے۔ ایوان کو پرانی حیثیت سے بحال کیا جائے اور اسپیکر ہفتے کو دوبارہ اجلاس طلب کریں۔ عدم اعتماد کامیاب ہو تو فوری نئے وزیراعظم کا الیکشن کرایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں


Notice: Undefined index: HTTP_CLIENT_IP in /home/aliucqdo/public_html/wp-content/themes/upaper/functions.php on line 296

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/aliucqdo/public_html/wp-content/themes/upaper/comments.php on line 73

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/aliucqdo/public_html/wp-content/themes/upaper/comments.php on line 79

اپنا تبصرہ بھیجیں